Enter your keyword

Thursday, 3 November 2016

Gham K Manzar Sy Juray Aor Bhi Manzar Dekho by Ambreen Sidra

Gham K Manzar Sy Juray Aor Bhi Manzar Dekho by Ambreen Sidra

غم کے منظرسے جڑے اور بھی منظر دیکھو .
میری آنکھوں میں بپھرتے یہ سمندر دیکھو.

کعبہء دل کو گرانے کوئی لشکر آیا .
کیا ابابیلوں نے برساۓ ہیں کنکر دیکھو.

جان باقی ہے نہ دھڑکن نہ ہی سانسوں کی صدا ...
لے گیا چھین کے سب کچھ وہ ستمگر دیکھو.

غم رلاۓ نہ خوشی اس کو خوشی دے کوئی ..
کون پتھرایا مری ذات کے اندر دیکھو.

ایک ضد تھی وہ زلیخا کی محبت تونہ تھی ..
ایک بہتان کی زد پر تھا پیمبر دیکھو.

آخری ہے یہ سفر جس پہ چلی ہو سدرہ ..
آخری بار مجھے دیکھو پلٹ کر دیکھو

امبرین سدرہ

*****************************************************************

غزل
آنکھوں سے جو اشکوں کی یہ برسات ہوئی ہے .
پھر آج ترے غم سے مجھے مات ہوئی ہے .
ہمراہ ستاروں کے بھٹکتی ہوئی نیندو ..
اب لوٹ بھی آؤ کہ بہت رات ہوئی ہے
دوران_سفرمرگیا امید کا سورج.
اک دشت_حوادث میں مجھے رات ہوئی ہے .
کیا پیارکوئی جادونگر ہے یہ بتاؤ .
جو میری خوشی نذر_طلسمات ہوئی ہے
وہ تم تھے کہ سدرہ تھی کہ تھا وہم کا سایہ .
معلوم نہیں کس سے ملاقات ہوئی ہے .
امبرین سدرہ

**************************************************************
روح سے جسم باندهنا ہے مجھے
سانس زنجیر کر رہی ہوں میں


Submitted by: Ayesha Rani
Post a Comment

Your Comments